کائنات نیوز! یاد رہے کہ ہر مسلمان دوسرے مسلمان کا خیر خواہ ہے اور ہمارے پیارے آقا ﷺ تو اپنی پوری امت کے لیے سراپہ شفقت تھے۔ آپ ﷺ نے اپنی اُمت کے لوگوں کو پیاری پیاری دُعائیں سکھائی ہیں اور ہر موقعے کے لیے آپ ﷺ نے دعائیں بتلائی ہیں آج ہم آپ کو ایسی دعا بتانے جا رہے ہیں جو کہ ہر بیماری کے لیے اور ہر مریض کے لیے شفاء کے لیے بتائی گئی ہے یہ دعا مسنون دعا ہےاور عیادت کرنے والے کو تعلیم کی گی ہے کہ جب کوئی بھی مریض کی عیادت کر ے یہ دعا پڑھے یہ دعا کیا ہے اور آپ نے اسے کیسے پڑھنا ہے۔اس حوالے سے مکمل تفصیل جاننے کے لیے میری ان باتوں کو بہت ہی زیادہ غور سے سنیے گا ۔ آج کے موضوع کے حوالے سے تفصیل بھی بتائیں گے لیکن اس سے پہلے یہاں پر ایک گزارش کر نا چاہتا ہوں کہ میری ان باتوں کو بہت ہی زیادہ دھیان سے سنیے گا تا کہ کل کو کسی بھی قسم کا کوئی بھی مسئلہ نہ ہو اس عمل پر عمل کر تے ہو ئے کیونکہ یہ جو عمل ہے یہ جو تسبیح ہے اس تسبیح کے بہت ہی زیادہ فوائد ہیں کہ جن کے بارے میں جان کر آپ حیران ہو جا ئیں گے۔ شفاء صرف اور صرف اللہ کے ہاتھ میں ہے جیسا کہ اللہ قرآنِ پاک میں فر ما تا ہے ۔سورۃ الشعراء کی آیت نمبر اَسی ترجمہ اور جب میں بیمار پڑتا ہوں تو وہی مجھے شفاء بخشتا ہے شفاء کی نسبت تو اللہ کی طرف فر ما ئی گئی مگر بیماری کی نسبت اللہ کی طرف نہیں کی گئی کیونکہ نعمتیں جتنی بندے کو ملتی ہیں وہ سب اللہ ہی کی طرف سے ملتی ہیں لیکن جب انسان کو کوئی تکلیف پہنچتی ہے تو زیادہ تر اس کے اپنے اعمال کی وجہ سے پہنچتی ہے اللہ کی مرضی سے ہی ہے لیکن اس میں انسان کی اپنی غفلت کا بھی عمل ہو تا ہے اسی وجہ سے وہ بندے سے منسوب ہو تی ہے یاد رہے کہ اس بات میں شک کر نا ک فر ہے کہ اگر کوئی یقین کر ے کہ شفاء اللہ کے حوالے کوئی اور دینے والا ہے۔ البتہ علاج کروانے کی ممانیت نہیں ہے لیکن یاد رہے کہ علاج کروانے میں بھی ہمیں اللہ کے حکم اور نبی ﷺ کے طریقے کو دیکھنا پڑے گا کہاللہ نے شفاء حاصل کرنے کے لیے کیا فر مایا اور ہمارے پیارے نبی ﷺ نے کیا طریقہ اختیار فر ما یا احادیث سے یہ بات واضح ہو تی ہے کہ بیماری کو زحمت نہیں سمجھنی چاہیے۔ ہر پریشانی کا انسان کو بیماری میں سا منا کر نا پڑتا ہے لیکن اس کی وجہ سے انسان کو گ ن ا ہ وں سے خلاصی ملتی ہے حضورِ اقدس جب خود کسی مریض کے پاس آ تے یا مریض آپ ﷺ کے پاس لا یا جا تا تو یہ دعا پڑھتے۔ مریض کو بھی چاہیے کہ سورۃ فاتحہ اور سورۃ اخلاص پڑھ کر اپنے ہاتھوں پر پھانک کر اپنے چہرے پر پھیر لے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں